مسجد نمرہ


مسجد نمرہ وہى جگہ ہے جس میں نبي صلى الله عليه وسلم نے حج وداع کے موقع ہر ظہر اور عصر كى نمازيں پڑھی تاکہ لوگ اس کو اپنے وقوف عرفات کے دن نماز گاہ بنا لیں. [1]

 

فھرست

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

مسجد نمرہ میں ٹہرنا

نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم سے ثابت ہے کہ آپ صلی اللہ علیہ وسلم زوال شمس ( یہ ظہرکا اول وقت ہوتا ہے ) تک نمرہ ( میدان عرفات سے قبل ایک جگہ کانام ہے ) میں ہی ٹھرے رہے پھر آپ صلی اللہ علیہ وسلم سوار ہوئے اوروادی عرنہ ( یہ میدان عرفات اورنمرہ کے درمیان ایک وادی ہے ) کے درمیان میں پڑاؤ فرمایا اوروہاں ایک اذان اوردواقامتوں کے ساتھ ظہراورعصر کی نماز دو دورکعت جمع تقدیم کرکے ادافرمائي۔[2]

 

مسجد نمرہ میں نماز باجماعت ادا کرنا

بعض لوگ یہ خیال کرتےہیں کہ انسان کومسجد نمرہ میں امام کےساتھ ہی ظہر اورعصر کی نماز ادا کرنا ضروری ہے ، جس کی بنا پرانہيں اس میں مشقت اورتکلیف کا سامنا کرنا پڑتا ہے اوراس طرح ان کے لیے حج تنگي اورحرج سابن کررہ جاتا ہے ، اوروہ ایک دوسرے پرتنگی کرتے اورتکلیف دیتے ہیں ۔[3]

 

اور دیکھیے

مسجد حرم ، مسجد نبوی ، مسجد قباء

 

حوالے

1. http://alifta.net/Search/ResultDetails.aspx

2. http://islamqa.info/ur/34293

3. http://islamqa.info/ur/34293

1353 Views
ہماری اصلاح کریں یا اپنی اصلاح کرلیں
.
تبصرہ
صفحے کے سب سےاوپر